Dec 27, 2017

Lines From Urdu Novel - Iktibas in Urdu

Lines From Urdu Novels Images - Iktibas in Urdu Photos, Black Background Urdu Novels say iqtibas,sad iktbas by urdu novl, Quotes in Urdu Images From Urdu Novels, umera ahmed novels iqtibas, aab e hayat novel in pics, best iqtibas fb, iqtibas from urdu novels, iktibas in urdu, khoobsurat iqtibas, khoobsurat iqtibas, urdu mazahiya iqtibas, urdu adab iqtibas, urdu iqtibas ashfaq ahmed, nimra ahmed quotes, urdu quotes about life, beautiful quotes in urdu for facebook, amazing quotes in urdu.

خواتین یہ پوسٹ ضرور پڑھیں، خاص طور پر وہ جو عورت مارچ اور عورتوں کے حقوق کیلیے اندھادھند  بحث کرتی ہیں۔ 
 کائنات حیران ہے
فرشتے حیران ہیں
اہلِ ایمان حیران ہیں
کہ تیرہ چودہ سال کی عمر میں شادی ہوئی میکے جاتے اتنی بڑی چادر لپیٹتی تھیں کہ سیدہ ام المومنین عائشہ (رضی اللہ عنہا) فرماتی ہیں کہ چال سے پتہ چلتا تھا کہ کون تشریف لا رہی ہیں ،چال سرکار دوعالم (صلی اللہ علیہ والہ وسلم) سے ملتی تھی ،والد کا بے پناہ پیار ملا، ماں بچپن میں چل بسی، حیا اتنا کہ یہودی اور عیسائي بھی سر جھکا لیتے کم عمری میں شادی، کم عمری میں اولاد، جوانی میں وفات قرآن کی حافظہ تھیں، ہر رات قرآن ختم فرماتیں، اور روتیں
یا اللہ تو نے راتیں چھوٹی کیوں بنائیں میری عبادت پوری نہیں ہوتی، والی کائنات (صلی اللہ علیہ والہ وسلم) کی لاڈلی بیٹی، چکی پیستے ہاتھوں پر چھالے غربت آخری درجے کی، حسنین کریمین (رضی اللہ عنہما) کی عمروں میں بہت کم فرق
دنیا میں جنت کی بشارت
نہ صرف بشارت
بلکہ فرمایا ،آپ جنت میں عورتوں کی سردارنی ہونگی
جنت میں تمام عورتوں کی سردارنی بشمول ام الناس حوا (سلام اللہ علیہا)
سیدہ حاجرہ، سارہ، سیدہ مریم اور امہات المومنین (سلام اللہ علیھم)
اتنا رتبہ جتنا کائنات میں کسی کا نہیں
لیکن کبھی نہیں کہا، میں چکی نہیں پیستی
کھانا، علی خود بنا لو اور مجھے پکا کر کھلاؤ آخر سردارنی ہوں
بہشت بریں کی اور جنت الفردوس کی
بچوں کو سنمبھالو، کپڑے خود دھو لو
میں فاطمۃ الزہرہ، امام الانبیاء (علیہ السلام) کی بیٹی ہوں، میری ماں خدیجۃ الکبری ہے
میں حسنین کریمین کی ماں ہوں، میرا باپ وجہ کائنات ہے، خاتم النبیین ہے
میرے لخت جگر جنت کے جوانوں کے سردار ہیں
میں علی مرتضی (رضی اللہ عنہ) کی بیوی ہوں
ساری زندگی ایک یمنی چادر میں گزاری
جتنے غرور ممکن ہیں عورت کیلئے صرف جگر گوشہ رسول (صلی اللہ علیہ والہ وسلم) کو سجتے ہیں
لیکن بظاہر انکی پیروکار کہلانے والی عورتیں کس کی پیروکار ہیں
کونسے حقوق
کونسی عورت
کونسا تحفظ
زراسوچئیے ھم کیا ھیں؟؟؟
ان پاک ھستیوں کے پیروں کی خاک بھی  نہیں
پھر کس بات کا غرور  کرتی ھیں ھم؟؟؟
ھم کیوں اپنے گھر کے کام نہیں کرسکتیں؟کیوں بچوں کی پرورش  سے گریزاں ھیں؟؟
آج  کی عورت  کیوں بینر اٹھا کرسڑک پہ آتی ھے کہ میں کھانا نہیں پکاتی۔میراجسم میری مرضی۔خدارا سوچئیے کہیں ھم کسی کے بچھاۓ ھوۓ جال میں تو نہیں پھنس رھیں؟ھمیں ھمارے اصل  مقام سے محروم کرنے کی جو سازشیں چل رھیں ان کو ناکام کریں ۔اپنا مقام پہچانیں ۔
*وہ معاشرہ جہاں عورت کو بولنے کا حق نہیں تھا، مقام کیا پایا الفاظ نہیں ہیں۔*
اللہ پاک ھمیں خاتون جنت کی پیروی کی توفیق عطا فرماۓ
آمین



ہر کھوئی چیز واپس نہیں ملتی۔ اپنے ہاتھوں سے کسی کو کھو دو تو وہ کبھی واپس نہیں ملتا۔


 








Post a Comment