آپ قید ہیں‘ ڈیڈ! - No. I am free.

Jul 26, 2021

No. I am free. For the first time I am free, Ariana. ”He rolled his eyes and looked at the worried and frightened girl against the smiling wall.“ No one here knows me. No one will make my scandal. No one will judge me. I have never been so free. I have no responsibility. I don't want to run this country. I don't want to run any party. Look around ... no one here is interested in me. I don't want to keep my business fees in front of anyone. I am free. And I can cook in this kitchen. " 

’’آپ قید ہیں‘ ڈیڈ! وہ روہانسی ہوئی ۔’’ہر چیز میں مثبت پہلو دیکھنا چھوڑ دیں‘ ڈیڈ۔‘‘

’’نہیں۔ میں آزاد ہوں۔پہلی دفعہ میں آزاد ہوا ہوں‘ آریانہ ۔‘‘ اس نے نظروں کا زاویہ موڑا اور مسکرا کے دیوار سے لگی پریشان اور ڈری ہوئی لڑکی کو دیکھا۔’’مجھے یہاں کوئی نہیں جانتا۔کوئی میرا اسکینڈل نہیں بنائے گا۔ کوئی مجھے جج نہیں کرے گا۔میں کبھی اتنا آزاد نہیں ہوا۔میرے اوپر کوئی ذمہ داری نہیں ہے ۔ مجھے اس ملک کو نہیں چلانا۔مجھے کوئی پارٹی نہیں چلانی ۔ دیکھو اردگرد ....یہاں کوئی مجھ میں انٹرسٹڈ نہیں ہے ۔ مجھے کسی کے سامنے اپنا بزنس فیس قائم نہیں رکھنا۔میں آزاد ہوں۔ اور میں اس باورچی خانے میں کھانا پکا سکتا ہوں۔‘‘

’’آپ پھنس چکے ہیں۔ آپ مظلوم ہیں۔ آپ وکٹم ہیں۔ آپ....‘‘

’’میں مظلوم نہیں ہوں۔ میں نے اپنی مرضی سے وہ دروازہ پار کیا تھا ۔ یہ میری چوائس تھی ۔ اور میں یہ نہیں کہہ رہا کہ میں یہاں خوش ہوں۔ نہیں۔ میں یہ کہہ رہا ہوں کہ میں مشکل وقت میں ہاتھ پہ ہاتھ دھر کے نہیں بیٹھوں گا۔ میں اس سے کچھ سیکھ کے ہی نکلوں گا۔ تمہارے باپ نے آج تک ہمت نہیں ہاری ۔ give up

نہیں کیا ۔ تو اب وہ کیوں ہمت ہارے گا۔ نکل تو میں آؤں گا اس سے ۔ مگر مجھے اس قید کو بھی ایک تجربے جیسا سمجھنا ہے جو مجھے کچھ سکھائے ۔ مجھے اس سے بہتر انسان بن کے نکلنا ہے ۔ زیادہ آزاد۔‘‘

’’آپ کو ڈرنا چاہیے کہ یہ جنگلی لوگ آپ کو مار نہ دیں۔‘‘

’’مرنا کیا ہوتا ہے آریانہ ؟‘‘ اس نے گہری سانس لی اور بازوؤں کا تکیہ سر تلے رکھے دوبارہ سے اوپر دیکھنے لگا۔’’ایک دنیا سے دوسری میں چلے جانا اور جب آپ ایک نئی دنیا میں چلے جاتے ہو تو پچھلی کے فائدے نقصان بے معنی ہو جاتے ہیں۔ اگر مار بھی دیں تو کیا ہو گا؟ میں موت سے نہیں ڈرتا ۔ موت بھی صرف ایک تجربہ ہے ۔ اصل بات یہ ہے کہ میں دنیا سے جانے سے پہلے وہاں کتنی اچھائی اور پوزیٹویٹی پھیلا کے جاتا ہوں۔ جب انسان کو یہ ایمان آ جاتا ہے نا‘ تو وہ موت سے نہیں ڈرتا۔‘‘

حالم ناول 

Post a Comment

© Urdu Thoughts.