ایسی کون سی چیز ہے جو آپ نے حال ہی میں پڑھی ہے اور شیئر کرنے کے قابل ہے؟The Universe 25

Jan 14, 2022

The "Universe 25" try it is one of the most startling analyses throughout the entire existence of science, which, through the conduct of a state of mice, is an endeavor by researchers to clarify human social orders. The possibility of ​​"Universe 25" Came from the American researcher John Calhoun, who made an "optimal world" in which many mice would live and imitate. All the more explicitly, Calhoun constructed the purported "Heaven of Mice", an extraordinarily planned space where rodents had an Abundance of food and water, just as an enormous residing space. To start with, he set four sets of mice that in a brief time frame started to repeat, bringing about their populace developing quickly.

"کائنات 25" کا تجربہ سائنس کی تاریخ کے سب سے خوفناک تجربات میں سے ایک ہے، جو چوہوں کی کالونی کے رویے کے ذریعے، سائنسدانوں کی جانب سے انسانی معاشروں کو سمجھانے کی ایک کوشش ہے۔

"کائنات 25" کا خیال امریکی سائنسدان جان کالہون کی طرف سے آیا، جس نے ایک "مثالی دنیا" تخلیق کی جس میں سینکڑوں چوہے زندہ رہیں گے اور ان کی افزائش ہوگی۔ مزید خاص طور پر، کالہون نے نام نہاد "چوہوں کی جنت" بنائی، ایک خاص طور پر ڈیزائن کی گئی جگہ جہاں چوہوں کو خوراک اور پانی کی کثرت کے ساتھ ساتھ رہنے کی ایک بڑی جگہ تھی۔

شروع میں اس نے چوہوں کے چار جوڑے رکھے جو تھوڑے ہی عرصے میں دوبارہ پیدا ہونے لگے جس کے نتیجے میں ان کی آبادی میں تیزی سے اضافہ ہوا۔ تاہم 315 دنوں کے بعد ان کی تولید میں نمایاں کمی آنا شروع ہو گئی۔ جب چوہوں کی تعداد 600 تک پہنچ گئی، تو ان کے درمیان ایک درجہ بندی قائم ہوئی اور پھر نام نہاد "خرابی" ظاہر ہوئے۔

بڑے چوہوں نے گروپ پر حملہ کرنا شروع کر دیا، جس کے نتیجے میں بہت سے نر نفسیاتی طور پر "گرنے" لگتے ہیں۔ نتیجے کے طور پر، خواتین نے اپنی حفاظت نہیں کی اور بدلے میں، اپنے بچوں کے خلاف جارحانہ ہو گئے. جیسے جیسے وقت گزرتا گیا، خواتین نے زیادہ سے زیادہ جارحانہ رویہ، تنہائی کے عناصر، اور تولیدی مزاج کی کمی کا مظاہرہ کیا۔

کم شرح پیدائش تھی اور ساتھ ہی، کم عمر چوہوں کی شرح اموات میں اضافہ ہوا۔ پھر، نر چوہوں کی ایک نئی کلاس نمودار ہوئی، نام نہاد "خوبصورت چوہے"۔ انہوں نے خواتین کے ساتھ ہمبستری کرنے یا اپنی جگہ کے لیے "لڑنے" سے انکار کر دیا۔ انہیں صرف خوراک اور نیند کی فکر تھی۔ ایک موقع پر، "خوبصورت مرد" اور " الگ تھلگ خواتین" آبادی کی اکثریت پر مشتمل تھی۔

جیسے جیسے وقت گزرتا گیا، نوعمروں کی شرح اموات 100% تک پہنچ گئی اور تولید صفر تک پہنچ گیا۔ خطرے سے دوچار چوہوں کے درمیان، ہم جنس پرستی کا مشاہدہ کیا گیا، اور، ایک ہی وقت میں، اس حقیقت کے باوجود کہ کھانے کی وافر مقدار موجود تھی۔ تجربہ شروع ہونے کے دو سال بعد کالونی کے آخری بچے کی پیدائش ہوئی۔ 1973 تک، اس نے کائنات 25 میں آخری چوہے کو مار ڈالا۔ جان کالہون نے اسی تجربے کو مزید 25 بار دہرایا، اور ہر بار نتیجہ وہی نکلا۔

اس سائنسی کام کو سماجی زوال کی تشریح کے لیے ایک نمونے کے طور پر استعمال کیا گیا ہے، اور یہ تحقیق شہری سماجیات کے مطالعہ کے لیے ایک فوکل پوائنٹ کے طور پر کام کرتی ہے۔

Post a Comment

© Urdu Thoughts.